Skip to main content

وزیر اعظم عمران آج ملک گیر خوراک کی فراہمی کے منصوبے کا اعلان کریں گے


اسلام آباد - وزیر اعظم عمران خان پیر کے روز ملک بھر میں بلا تعطل خوراک کی فراہمی کو یقینی بنانے کے لئے ایک جامع روڈ میپ کا اعلان کریں گے ، اسے ریڈیو پاکستان نے آج رپورٹ کیا۔

معاون خصوصی برائے اطلاعات و نشریات ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان کے مطابق ، وزیر اعظم نے ملک بھر کے مستحق غریب خاندانوں کو ان کے دہلیز پر راشن اور کھانے کی فراہمی کی فراہمی کو یقینی بنانے کے اپنے عہد کی تجدید کی۔

انہوں نے کہا کہ کورونا وائرس کے پھیلاؤ کو روکنے کے لئے جاری لاک ڈاؤن کی وجہ سے قومی معیشت متاثر ہورہی ہے اور روز مرہ استعمال کی اشیاء کا سلسلہ سست پڑ گیا ہے۔

مشیر نے کہا کہ وزیر اعظم نے وزیر قومی فوڈ سیکیورٹی کو مشورہ دیا کہ آٹے سمیت اشیائے خوردونوش کی دستیابی کو یقینی بنائیں۔

فردوس نے کہا کہ ملک میں خوردنی اشیا کی کوئی کمی نہیں ہے اور کمیٹی نے ذخیرہ اندوزوں اور منافع خوروں کے ساتھ آہنی ہاتھ سے سلوک کرنے کے عزم کا اظہار کیا۔

Comments

Popular posts from this blog

‏کبھی ایسی کہانی سنی

‏کبھی ایسی کہانی سنی ہے؟  ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ عون چوہدری کی بیوی فلمسٹار نور جوکہ بشریٰ بی بی عرف پنکی پیرنی کی مریدنی تھی۔ عمران نیازی جو کہ عون چوہدری کے دوست ہیں عون چوہدری کی بیوی فلمسٹار نور نے ہی عمران نیازی کو بشریٰ بی بی سے متعارف کروایا۔ اور پھر عمران نیازی نے بشریٰ بی بی کی خاور مانیکا سے طلاق کروا کر شادی کر لی۔ اسی دوران عون چوہدری کو بشریٰ بی بی کی بیٹی کی سہیلی پسند آ گئی عون چوہدری نے فلمسٹار نور کو طلاق دے کر بشریٰ بی بی عرف پنکی پیرنی کی بیٹی کی کلاس فیلو اور سہیلی کے ساتھ شادی کر لی۔ جس فلمسٹار نور کو عون چوہدری نے طلاق دی اس نور کے ساتھ زلفی بخاری نے شادی کر لی۔ پھر بشریٰ بی بی عرف پنکی کی فرمائش پر عون چوہدری نے بشری بی بی کی بیٹی کی کلاس فیلو کو طلاق دے دی جس کی شادی بشریٰ بی بی کے سابق خاوند خاور مانیکا نے شادی کر لی جو تاحال قائم ہے۔ عون چوہدری ایک بار پھر چھڑا ہو گیا مگر اس دوران زلفی بخاری کا دل بشریٰ بی بی کی بیٹی پر آگیا اور اس نے فلمسٹار نور کو طلاق دیکر پنکی پیرنی کی بیٹی سے شادی کر لی یوں زلفی بخاری بیک وقت خاور مانیکا اور خا

مریخ پر ایلین کی زندگی کی تصدیق؟

یونیورسٹی آف ٹوکیو کے محققین کے ذریعہ کی گئی ایک نئی تحقیق میں مریخ پر اجنبی زندگی کے فروغ پزیر ہونے کے امکان کی تجویز دی گئی ہے۔ اس مطالعاتی رپورٹ سے یہ ظاہر ہوتا ہے کہ سرخ سیارے کے سمندری غلاف پر آتش فشاں چٹانوں میں اجنبی زندگی موجود ہوسکتی ہے۔ مطالعاتی رپورٹ میں ، سائنس دانوں نے انکشاف کیا ہے کہ مریخ پر زیر زمین آتش فشاں پھیلتے تھے جس کے نتیجے میں بھاری مقدار میں اضافے خارج ہوجائیں گے۔ یہ لاوا بعد میں ان پتھروں کی تشکیل کے لئے ٹھنڈا پڑتا ہے جو ننھی دراڑوں کے ساتھ پہیلی بن جاتے ہیں۔ اس مطالعے میں حصہ لینے والے ماہرین کا خیال ہے کہ وقت کے ساتھ ساتھ یہ چھوٹی دراڑیں مٹی کے معدنیات سے بھر جائیں گی ، جس کا نتیجہ زندگی کے ارتقا میں بھی مل سکتا ہے ، کم سے کم بیکٹیریا جیسی مائکروبیل شکل میں۔ “میں اب قریب سے زیادہ توقع کر رہا ہوں کہ مجھے مریخ پر زندگی مل سکتی ہے۔ اگر نہیں تو ، یہ ہونا ضروری ہے کہ زندگی کسی دوسرے پروسیس پر انحصار کرتی ہے جس میں مریخ نہیں ہوتا ہے ، جیسے پلیٹ ٹیکٹونک میں نے پتھروں میں اتنی بھر پور مائکروبیل زندگی دیکھ کر یہ سوچا تھا کہ یہ ایک خواب ہے۔ یہ دراڑیں

سعودی عرب نے مدینہ منورہ کے شہر مکہ مکرمہ میں 24 گھنٹے کرفیو نافذ کردیا

جدہ - سعودی عرب میں جمعرات کے روز مکہ مکرمہ اور مدینہ منورہ میں 24 گھنٹے کے کرفیو کا اعلان کیا گیا جس کے بعد مملکت میں کورونویرس کی ہلاکتوں کی تعداد 21 ہوگئی۔ اس سے پہلے یہ شہر 15 گھنٹے کے یومیہ کرفیو کے تحت تھے۔ سعودی عرب کے سرکاری عہدیدار نے وزارت داخلہ کے ایک ذرائع کے حوالے سے بتایا ، "مکہ اور مدینہ میں 24 گھنٹے سے جاری کرفیو آج سے شروع ہوکر اگلی اطلاع تک جاری ہے۔" حکام نے ریاض اور جدہ کے ساتھ ہی مکہ اور مدینہ پر مہر ثبت کردی ہے ، جس سے لوگوں کو شہروں میں داخل ہونے  اور جانے سے روکنے کے ساتھ ساتھ تمام صوبوں کے درمیان نقل و حرکت پر پابندی عائد ہے۔ سعودی عرب ، جس نے خلیج میں سب سے زیادہ انفیکشن کی اطلاع دی ہے ، گھر میں ہی اس بیماری کے پھیلاؤ کو محدود کرنے کے لئے گھوم رہے ہیں۔ جمعرات کے روز وزارت صحت نے بتایا کہ بیماری سے اموات 21 ہوگئی ہیں جبکہ 1،885 انفیکشن کی اطلاع ہے۔