پاکستان_میں_ہی_وبا_کیوں

#پاکستان_میں_ہی_وبا_کیوں چند ماہ قبل جناب عمران خان صاحب نے سعودیہ عرب کا دورہ کیا تو سعودیہ عرب نے دورے سے قبل خصوصی طور پر یہ پیغام بھیجا کہ آپکے وفد میں زلفی بخاری شامل نہ ہو کیونکہ زلفی بخاری ایران کے قریب ہے سعودیہ کے اس پیغام کے پیچھے ایک سوچ تھی کہ ہمیں زلفی بخاری پر اعتماد نہیں ہے لیکن افسوس ہزاروں میل دور رہنے والے لوگوں پر تو یہ بات واضح ہوگئی کہ زلفی بخاری پاکستان کی بجائے ایران کے ساتھ مخلص ہے لیکن قربان جاؤں وزیر اعظم کی دور اندیشی پر کہ انہوں نے زلفی بخاری کو پرسنل سیکرٹری رکھ لیا آج جب زلفی بخاری کی شیعہ نوازی کی وجہ سے وطن عزیز میں کرونا کی وبا پھیلی تو احساس ہوا کہ دور اندیش ہمارے وزیر اعظم صاحب نہیں بلکہ وہ سعودی ہیں جنہیں ہم آج بھی بدو کہکر پکارتے ہیں اور ان بدؤوں کا فیصلہ درست تھا آخر یہ وبا پاکستان میں پہنچی کیسے۔



۔۔۔ میں احباب کے گوش گزار کرتا چلوں کہ ایرانی شیعہ زائرین میں معروف شیعہ ذاکرہ طیبہ خانم کابیٹا بھی تھا جنہیں تفتان میں ٹھہرائے جانے کا پلان بنایاگیا لیکن طیبہ خانم نے وزیر اعظم ھاؤس میں موجود اپنے مُہرے زلفی بخاری سے رابطہ کیا توزلفی بخاری نے ہر طرح کے تعاون کی یقین دہانی کروائی اور پھر زلفی بخاری نے اپنا سیاسی اثر سوخ استعمال کرتے ہوئے تمام شیعہ زائرین کو بغیر سکرینگ کے پاکستان میں منتقل کردیا سوچنے کی بات یہ ہے کہ ایران کی سرحدیں افغانستان عراق اور ترکمانستان سے بھی ملتی ہیں لیکن کیاوجہ ہے کہ کروناوائرس شیعہ زائرین کی صورت میں صرف پاکستان میں ہی منتقل ہوا؟؟ وجہ صاف ہے کہ وہاں کے حمرانوں میں زلفی بخاری جیسے ایرانی مفادات کے وفادار نہیں ہیں وہاں کے وزرا اعظم اور صدور کے زلفی بخاری جیسےشیر خاص نہیں ہیں جو ملک قوم کے مفادات کو ایک مخصوص ٹولے کی خوشنودی کی بھینٹ چڑھادیں وہاں کے حکمرانوں میں اندرونی خلفشار لاکھ سہی لیکن زلفی بخاری جیسے منافق اور غدار نہیں ہیں جو اپنی ہی تھالی میں چھید کریں تحریک انصاف کے معزز دوست کہرے ہیں کہ کیسے ہوسکتا ہے کہ زلفی بخاری جیسا کل کا بچہ ہزاروں زائرین کو پاکستان لائے اور نہ ہی آرمی چیف کو پتہ چلے اور نہ وزیر اعظم صاحب کو۔۔۔۔تو وہ معزز دوست کیا یہ معمہ حل کرنے کی زحمت کرینگے ایران سے روزانہ کی بنیاد پر ہزاروں ٹن تیل پاکستان میں سمگل کیا جاتاہے کیا آرمی چیف صاحب کی مرضی سے کیا جاتاہے ؟ پاڑہ چنار ۔۔ہنگو ۔۔۔گلگت۔۔ہزارہ ۔۔۔کراچی اور لاہور کے امام باڑوں میں ایرانی اسلحہ سیکیورٹی فورسز نے متعدد بار پکڑا تو کیا وہ اسلحہ وزیر اعظم کی مرضی سے پہنچایاجاتا ہے ؟


کلبھوشن یادو جیسے دہشتگرد ایران سے داخل ہوتے ہیں تو کیا وزیر اعظم صاحب کی اطلاع میں لاکر وہ داخل ہوتے ہیں ؟ مان لیجئے کہ ایرانی لابی آپکے تمام اداروں میں جڑیں مضبوط کرچکی ہے اور اب ایران جب چاہے جہاں چاہے جیسے چاہے اور جو چاہے کرسکتاہے کیونکہ حکمران طبقے میں زلفی بخاری اور علی زیدی جیسے ایرانی وفادار اس قدر مضبوطی سے بیٹھے ہیں کہ زلفی بخاری کیخلاف ٹویٹ کرنے پر معروف صحافی ڈاکٹر دانش جیسے بھی نوکری سے ہاتھ دھو بیٹھتے ہیں ملائیشیا کے صدر مہاتیر محمد نے کیا خوب کہا تھا کہ دنیا کا کوئی بھی شیعہ چاہے وہ کسی بھی ملک کا شہری ہو اسکی تمام تر وفائیں ایران کیلئے ہونگی ناکہ اپنے آبائی وطن کیلئے۔ اب تک کے لیے اجازت دیجیا (طلحہ سعد )

Post a comment

1 Comments